سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کو معاف کردیا

سپریم کورٹ نے توہین عدالت کیس میں نہال ہاشمی کا تحریری معافی نامہ قبول کرتے ہوئے عدالتی کارروائی ختم کردی ہے۔ سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں رہنما مسلم لیگ (ن) نہال ہاشمی کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ چاہتا ہوں کہ آپ غیرمشروط معافی لکھ کر دیں، آپ کی غلطی کی سزا آپ کے بچوں کو نہیں دینا چاہتا، معافی سے مطمئن ہوئے تو نوٹس واپس لے لیں گے، نہال ہاشمی کو معافی اس کیس کی حد تک ہوگی تاہم کوئی یہ نہ سمجھے کہ ہم نے معافی کا اصول طے کرلیا ہے، توہین عدالت کے دیگر مقدمات کا جائزہ میرٹ پر لیں گے۔ چیف جسٹس نے نہال ہاشمی سے استفسار کیا کہ کیا آپ کو اپنے کہے پر ندامت یا شرمندگی ہے جس پر نہال ہاشمی نے جواب دیا کہ اپنے عمل پر شرمندہ ہوں، آئندہ اپنے گھر، گاڑی اور کسی بھی محفل میں محتاط رہوں گا۔ بعد ازاں سپریم کورٹ نے تحریری معافی نامے کے متن کا جائزہ لے کر نہال ہاشمی کو معاف کر دیا۔